مرکز

در حال بارگیری...
<h1>جس کی پہچان نماز ہے</h1>
<h1>نہایت سادگی</h1>

تلاش کریں

خالص باطل کا کوئی خریدار نہیں

ایک عجوبہ قدرت ہے کہ حضرت عیسیٰ (علیہ السلام) خود قتل نہیں ہوئے بلکہ ان کی بجائے مشابہ شخص قتل ہوا قتل عیسی (علیہ السلام) کے قائل کہتے ہیں کہ وہ تیں دن تک قبر میں رہے پھر ایک عورت نے گواہی دی کہ وہ قبر سے نکلے اور آسمان پر چلے گئے عورت کے بیان کے سبب انہوں نے دو باتوں کو یعنی قتل عیسیٰ (علیہ السلام) اور ان کے آسمان پر چلے جانے کو یکجا کرنے کی کوشش کی سوچنے کی بات ہے کہ کسی نا معلوم عورت کی گواہی کے تحت ہم حقائق نبوت کو کیسے تسلیم کرسکتے ہیں۔

ملت عیسیٰ (علیہ السلام) جو تعداد میں امت مسلم و یہود سے زیادہ اکثریت رکھتی ہے اسی نظریے پر کار بند ہوگئی ہے وارثان انجیل خود کہتے ہیں کہ ہم نے حضرت عیسیٰ (علیہ السلام) کی زبانی قتل ہونے، قبر میں رہنے اور پھر آسمان پر جانے کی کوئی بات نہیں سنی بلکہ ہمیں الہام ہوا ہے کہ یہ واقعہ اسی طرح ہے میں کہتا ہوں کہ الہام تو ایک ملکوتی امر ہے اب ان کے پاس یہ کوئی ثبوت نہیں کہ ان کا الہام ملکوتی الہام ہے بلکہ شیطان نے الہام کا سہارا لے کرایک شیطانی خیال ان کے ذہن میں راسخ کر دیا سچ ہے کہ خالص باطل کا کوئی خریدار نہیں ہوتا جب تک اس میں حق کی آڑ لے کر ملاوٹ نہ کی جائے۔


سوانح حیات


اورحدیں


نگارخانہ


ہدایات


سینٹر کے بارے میں

تازہ ترین مضامین

پروفائلز